رپورٹ: خدا خدا کرکے کفر ٹوٹا۔۔۔۔!

رپورٹ: خدا خدا کرکے کفر ٹوٹا۔۔۔۔!

173
0
SHARE

وزیر اعظم نوازشریف کی جو جان پھنسی تھی،اب ان کیلیے سائن آف ریلیف ہے۔چلیں دو مصیبتوں سے ایک سے تو جان چھوٹی۔۔۔کئی روز سے ڈان لیکس کا معاملہ حکمرانوں کے گلے میں اٹکا ہوا تھا،،وزیراعظم کی شکل تو رونے جیسی تھی، لیکن چوہدری نثار نے انہیں ریسکیو کردیا۔۔۔
کہتے ہیں کہ اگر کچھ عرصہ پہلے ملک کی خفیہ ایجنسی کے چیف اور چوہدری نثار ساتھ چائے پی لیتے تو مسئلہ اتنا طول نہ پکڑتا۔۔۔اب تو چوہدری نثار نے بھی پریس کانفرنس کر ڈالی،،، کہتے ہیں کہ معاملہ تو اتنا بڑا تھا نہیں ، لیکن اس کو بڑھا چڑھا کر پیش کردیا گیا،، اب چوہدری نثار کو کون سمجھائے،، جناب مسئلہ تو انتھائی بھاری بھرکم تھا،، دو ادارے ایک دوسرے سے ٹکرانے والے تھے،، یہ اسکائی لیب کے بعد پاکستان کی سیاست کا سب سے بڑا اشو تھا۔۔۔!
چلیں اگر اتنا بڑا اشو نہ تھا، تو کتنا بڑا تھا چوہدری صاحب۔۔؟
ڈان لیکس کے اشو پر تو ایک جانب تمام میڈیا اور دوسری جانب وزیر اعظم نوازشریف کھڑا ہونا تھا،، اگر اصل رپورٹ پر عمل کیا جاتا،،، اور خاص طور پر بڑی سرکار کی بات مان لی جاتی تو اب تک ڈان اخبار اور ٹیلی ویژن دونوں کی اشاعت اور نشریات اب معطل ہوتی،، پھر دنیا کو کس منہ سے شکل دکھاتے ؟
ایک جانب بھاری برکھم ادارہ اور دوسری جانب ایک کمزور سول نظام، سونے پر سہاگہ،، وزیراعظم بھی ایسا، جو اپنی ضد پر اڑے رہنے والے،،اور ایک بار تو اس تصادم سے اپنے نوکری بھی گنواں بیٹھےاور پھر دوبارہ غلطی کربیٹھے۔۔وزیراعظم اور اہم ادارے میں اعتماد کے فقدان کے بعد باقی کیا رہ جاتا،،،، اس کے بعد تو لڑائی اور جھگڑا ہی رہ گیا تھا،،، جب اس طرح کی ہاتھیوں کی لڑائی ہوتی ہے تو ماری چونٹیاں جاتی ہیں،،
چلیں موگبو خوش ہوا،، سول اور عسکری ادارے کے درمیاں جھگڑا عارضی طور پر ہی سہی ٹل گیا،، اب بھی یہ مطالبہ باقی ہے کہ ذرا وزیراعظم، آرمی چیف یا چوہدری نثار ڈان لیکس رپورٹ کو منظرعام پر تو لائیں،،، پھر دیکھتے ہیں کہ بات کہاں سے کہاں جا پہنچتی ہے،،،

LEAVE A REPLY